بھارت نے اقوام متحدہ کو پاکستانی فوج کی جانب سے اس کے دو فوجی اہلکاروں کو ہلاک کرنے اور ان کی لاشوں کے بے حرمتی کے الزامات سے متعلق یو این کو کوئی شکایت درج نہیں کرائی۔

اقوام متحدہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ بھارت نے اقوام متحدہ کو پاکستانی فوج کی جانب سے اس کے دو فوجی اہلکاروں کو ہلاک کرنے اور ان کی لاشوں کے بے حرمتی کے الزامات سے متعلق یو این کو کوئی شکایت درج نہیں کرائی۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی ’اے پی پی‘ کے مطابق اقوام متحدہ کے ترجمان اسٹیفن ڈوجیرِک نے اپنی پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ ’ہم نے پاکستان اور بھارت میں اقوام متحدہ کے فوجی مبصرین کے گروپ کے ساتھیوں سے اس حوالے سے پوچھا ہے، ہمیں حالیہ واقعے سے متعلق بھارتی انتظامیہ کی جانب سے سیز فائر کی مبینہ خلاف ورزی کی کوئی رپورٹ نہیں ملی۔‘

انہوں نے ایک نامہ نگار کی اس بات کی بھی تردید کی کہ اقوام متحدہ کے جنرل سیکریٹری اس معاملے کی طرف کوئی توجہ نہیں دے رہے۔

اسٹیفن ڈوجیرک نے زور دیتے ہوئے کہا کہ ’سیکریٹری جنرل معاملے پر توجہ دے رہے ہیں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم فریقین پر مذاکرات کے ذریعے معاملے کے پرامن حل کی ضرورت کا اعادہ کرتے رہیں گے۔‘

واضح رہے کہ بھارتی فوج نے دعویٰ کیا تھا کہ پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے ایل او سی کے قریب ہندوستانی پوسٹوں پر راکٹ اور مارٹر فائر کیے اور گشت پر تعینات دو ہندوستانی فوجیوں کی لاشیں مسخ کردیں۔

پاک فوج کی جانب سے اس الزام کی سختی سے تردید کی گئی تھی۔

بعد ازاں پاکستان اور بھارت کے ڈائریکٹر جنرلز ملٹری آپریشنز (ڈی جی ایم اوز) کے درمیان ہاٹ لائن پر رابطہ ہوا، جس میں مبینہ طور پر دو بھارتی فوجیوں کی لاشوں کی بے حرمتی کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

پاک فوج کے ڈی جی ایم او نے اس موقع پر بھارتی فوجیوں کی لاشوں کی بے حرمتی کے الزام کو بے بنیاد اور بے سر و پا قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔

ڈی جی ایم او نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے نہ ہی سیز فائر کی خلاف ورزی کی گئی اور نہ ہی پاکستانی فوجی لائن آف کنٹرول کے پار گئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *