ترک صدر کا بھارت پہنچتے ہی مطالبہ

نئی دہلی / انقرہ -ترک صدر رجب طیب اردوان 2 روزہ دورے پر بھارت پہنچ گئے جہاں وہ وزیر اعظم نریندر مودی سمیت دیگر حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق ترک صدر رجب طیب اردوان گزشتہ روز 2 روزہ دورے پر بھارت پہنچے نئی دہلی ایئرپورٹ پر انکا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ ترک صدر بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی اور دیگر اعلیٰ سرکاری اہلکاروں کے ساتھ بات چیت کریں گے، اردوان دورے کے دوران دو طرفہ تجارت اور دہشت گردی کے خلاف جنگ سے متعلق امورپرتبادلہ خیال کریںگے، ترک صدر کی کوشش ہو گی کہ وہ بھارت میں سرگرم ان تعلیمی اداروںکو بند کرا سکیں، جو امریکا میں مقیم ترک نژاد مبلغ فتح اللہ گولن کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

واضح رہے کہ ترکی میں منعقدہ متنازع آئینی ریفرنڈم کے بعد سے طیب اردوان کا یہ پہلا غیر ملکی دورہ ہے، بعد ازاں ایک بھارتی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے ترک صدر رجب اردوان نے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ثالث کا کردار ادا کرنے کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات ہر گزرتے دن کے ساتھ بہتر ہو رہے ہیں اور اس پر ہمیں خوشی ہے۔ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ضروری ہوا تو ترکی کی حیثیت سے ہم معاملے میں شامل ہو سکتے ہیں، اس مسئلے کا مذاکراتی حل دونوں ملکوں کے مفاد میں ہوگا۔

علاوہ ازیں صدر اردوان نے کہا کہ فیتو دہشت گرد تنظیم بھارت میں بھی سنجیدہ پیمانے پر منظم ہے لہذا بھارتی حکومت کو اس معاملے میں تدابیراختیار کرنا چاہیں، انھوں نے کہا کہ ترکی میں موجود دہشت گرد تنظیموں میں فیتوسرفہرست ہے اور داعش کیخلاف جو جدوجہد ترکی کررہا ہے وہ کسی اور ملک نے نہیں کی :-

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *