بابا بوٹا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔احمر اکبر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔  ۔

بابا جی آج بہت پریشان ہیں سب خیریت تو ہے ناں ؟ میں نے چاے والے کے باہر بیٹھے ہوے بابے بوٹے سے پوچھا
میں ان کو بچپن سے جانتا ہوں بہت بھلے مانس اور نیک دل انسان ہیں ,
کچھ خاص بات نہیں پتر جی ، بس خدا سے ایک سوال کیاہے اس کے جواب کے انتظار میں ہوں ،
میں سمجھ گیا ضرور کوئی پریشانی ہے میرے بہت اصرار پر بابے بوٹے نے بتایا کہ
,,ساری زندگی اپنے بچوں کے لیے محبت کی ، پڑھایا لکھایا ، اپنا کاروبار ان کے سپرد کر دیا شادیاں کروا دیں ، اب میں بیمار پڑ گیا ہوں ، چلنے پھرنے میں بھی الجھن ہوتی ہے تبھی گھر ہی زیادہ وقت گزارتا ہوں مگر آج میری بہو نے ایک بات بتائی ہے جو مجھے اللہ سے سوال کرنے پر مجبور کر رہی ہے ،،
وہ کیا بات ہے بابا جی مجھے بھی بتائیں ، میں نے بہت دھیمے لہجے میں ان سے پوچھا ,,,,,
بہو کہتی ہے ، تم میرے شوہر کا کھاتے ہو ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟…….؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟،،،،،،،؟؟؟؟؟؟؟؟؟
میں آج اللہ سے پوچھ کر جاوں گا کہ میں اللہ کا دیا کھاتا ہوں یا اپنی بیوی کے شوہر کا ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
تحریر ۔۔۔۔۔ احمر اکبر
عنوان ۔۔۔۔ بابا بوٹا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *