ختم نبوت کے باغیوں کو سرکاری کمیٹیوں میں شامل کرنا کسی صورت درست اقدام نہیں ہے۔حافظ ابوسفیان

بورے والا(چوہدری اصغر علی جاوید سے)صوبائی نائب صدر مرکزی علماء کونسل پنجاب حافظ محمد ابوسفیان حنفی نے وفاقی کابینہ کی طرف سے نیشنل کمیشن برائے اقلیت میں قادیانیوں کو بطورغیر مسلم شامل کرنی کی تجویز پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ قادیانی اس ملک کے آئین اور دستور کے باغی ہیں جنہوں نے آج تک آئین کی رو سے خود کو غیر مسلم اقلیت تسلیم ہی نہیں کیا ایسے گروہ کو حکومتی سطح پر نمائندگی دینا قابل تشویش ہے،حکومت مذہبی امور ڈویژن کی جانب سے جمع کروائی گئی نیشنل کمیشن برائے اقلیت کی تشکیل نو کی سمری پر نظرثانی کرے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا حافظ محمد ابوسفیان حنفی نے کہا کہ مرکزی علماء کونسل پاکستان قادیانیوں کو اقلیتی کمیشن میں شامل کرنے کی تجویز کو مسترد کرتی ہے جب تک قادیانی اپنی آئینی حیثیت کو تسلیم نہیں کرتے اس اقت تک انکو کسی قسم کا سرکاری پلیٹ فارم مہیا نہ کیا جائے مفکر پاکستان علامہ اقبال مرحوم نے فرمایا تھا کہ قادیانی اسلام اور ملک دونوں کے غدار ہیں پاکستانی قوم حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی ختم نبوت اور آئین کے باغیوں کو کسی صورت اپنی حیثیت تسلیم کیے بغیر حکومتی پلیٹ فارم پر قبول نہیں کرے گی حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی ختم نبوت ہمارے ایمان کا حصہ ہے ختم نبوت کے باغیوں کو سرکاری کمیٹیوں میں شامل کرنا کسی صورت درست اقدام نہیں ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے